Friday, September 25, 2015

'Eid al-Adha Message from Tehrik-i Taliban Pakistan's Maulana Fazlullah




عيد الاضحيٰ کے موقع پر امیرتحریک طالبان پاکستان طالب حق فضل اللہ خراسانی حفظہ اللہ کا پیغام امت مسلمہ کے نام


الحمداللہ وحدہ والصلوۃ والسلام علی من لا نبی بعدہ !
امابعد،
خوشی کے اس پر موقع پرمیری طرف سےپوری امت مسلمہ اور خاص طور پر پاکستان سمیت دنیا بھر میں کفراور انکے اتحادیوں سے برسرپیکار مجاہدین کو دل کی گہرائیوں سے عید مبارک ۔ میں چند باتیں امت مسلمہ اور خصوصاً پاکستان میں بسنے والے مسلمانو نام کہنا چاہتا ہوں۔
ہم سب کو چاہئے کہ عید کی خوشی میں غریب،نادار، اور مظلوم مسلمانوں کو بھی اپنے ساتھ برابر شریک کریں ،اور پاکستان سمیت دنیا بھر میں کفراور ان کے ایجنٹ حکومتوں کے ظلم سے ہجرت کرنے والے مسلمانوں کو خصوصی طور یاد رکھیں،اور ان سب کے ساتھ بھر پور تعاون ہماری اولین ترجیح ہونی چاہئے۔ اور جو لوگ دنیا بھر میں اللہ کے دین کی خاطر بے گھر ہوئے یا قید ہوئے یا ان پر دوسری مصیبتیں آئیں ان کو خوش ہونا چاہئے کہ اللہ تعالیٰ نے اپنے دین کی خاطر ان کا انتخاب کیا،
الحمداللہ ہم اسلام کے لئے فرنٹ لائن کا کردار ادا کررہیں اورجو لوگ ہمارے خلاف ہیں وہ کفر کا فرنٹ لائن ہیں اور پاکستانی فوج اور حکومت بارہا اس کا اقرار کرچکے ہیں،ہم اللہ تعالیٰ اور اسکے دین اسلام کے ایجنٹ ہیں جبکہ ہمارے خلاف لڑنے والے کفر اور ان کے دین (جمہوریت) کے ایجنٹ ہیں،جس کے بارے میں بھی آپ سب نے سنا ہوگا کہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف جنگ میں امریکہ اور دیگردنیائے کفر کے بڑے بڑے ملکوں کا بڑا یار ہے۔
تو اب پاکستان میں بسنے والے تمام مسلمان اور خصوصاً علماء،طلباء اور تمام  حکومتی و غیر حکومتی ادراوں میں کام کرنے والے جوانوں کو یہ ٖفیصلہ کرنا ہے کہ کیا وہ اسلام کے ایجنٹ بنناپسند کریں گے یا کفر اور ان کے دین جمہوریت کے ایجنٹ ۔
اور ایک بات اور جو تمام مسلمان اور خاص طور پر مجاہدین کے لئے ضروری ہے وہ یہ کہ اپنی زندگی کا مقصد صرف اللہ کی رضا پر مرکوز کریں اور میڈیا نے جھوٹ اور افوہوں کا جو طوفان کھڑا کیا ہے اس پر کان نہ دھریں ،اپنے صفوں میں اتفاق واتحاد برقرار رکھیں ،ہم کامیابی سے اپنی منزل کی طرف بڑھ رہے ہیں،اور ہمارا دشمن بوکھلاہٹ کے مارے ظلم اور جھوٹ پر اتر آیا ہے اور یہ سلسلہ بھی جلد ہی ختم ہونے والا ہے انشاء اللہ
اور آخر میں حکومت پاکستان کے اعلیٰ سطح سے لیکر ایک ادنیٰ ملازم تک کو میرا یہ پیغام ہے کہ کفر کی نوکری اور غلامی کو چھوڑنے اور توبہ کرنے میں تمھاری بھلائی ہے کیوں اسلامی نظام کی راہ رکاوٹ بنے ہوئے ہو اگر تمیں کفر کی نوکری میں جھنم جانا اتنا ہی پسند ہے تو اللہ کی قسم ہمیں بھی اللہ کے دین کی خاطر جنت جانا ہزارہا درجہ زیادہ پسند ہے، ہمارے اور تمھارے درمیان جنگ ہی فیصلہ کرنے والی ہے تاکہ یا تم ختم ہو جاؤ یا ہم۔۔۔ یعنی شریعت یا شہادت۔
والسلام
بندہ طالب حق فضل اللہ خراسانی

 

No comments: