بسم الله الرحمن الرحيم

مؤسسة عمر للإعلام
ادارہ عمر برائے نشرواشاعت

حركة طالبان باكستان
تحریکِ طالبان پاکستان

تقدم
پيش کرتے ہيں


رسالة إلى الأمة المسلمة بمناسبة عيد الفطر المبارك ١٤٣٤
عید الفطر کے موقع پر امتِ مسلمہ کے لئے پیغام – 1434

للأمير حكيم الله مسعود - حفظه الله
از امیر حکیم اللہ مسعود (حفظہ اللہ)

أمير حركة طالبان باكستان
امیر تحریکِ طالبان پاکستان

-------

بسم اللہ الرحمن الرحیم

تمام تعریفیں اللہ کے لیے ہے جس نے انسانوں کی فلاح اور ترقی کے لیے عظیم اور مقدس کتاب قرآن مجید نازل فرمائی جو انسانوں کو تمام دینی اور دنیاوی امور میں صرف ایک اللہ کی عبادت اور اطاعت کی تعلیم دیتی ہے اور جس پر عمل کرنے کے بعد انسان ایک اللہ کے سوا ہر قسم کی بندگی اور غلامی سے مکمل آزاد ہو جاتا ہے۔

امت مسلمہ کے غیورنوجوانو!عفت مآب ماؤں اور بہنو!ہر شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے ذی قدر مسلمان بھائیو!خصوصا معزز علماء کرام و طلبہ عظام اور کفارومرتدین کی قید میں موجود میرے ہر دلعزیز اسیر بھائیو اور بہنو!

عیدالفطر کے اس عظیم موقع پر میں آپ سب کو روزہ اور عید کی مبارکبادی کے ساتھ دنیا بھرمیں خصوصاً پاکستان ،افغانستان، شام ،عراق اور مالی کے محاذوں پر مجاہدین اسلام کی احیاء خلافت کی طرف تیز رفتار پیش قدمی اور طاغوتی نظاموں کی تباہی اور بربادی کی جانب سفر کی مبارک باد پیش کرتا ہوں۔

کفار ومرتدین گیار ہ سال کی ظلم و بربریت سے بھرپور جنگ کے بعد بالآخر مجاہدین اسلام کے سامنے بے بس اور شکست خوردہ ہو چکے ہیں، الحمدللہ

اور ایک طرف عالمی قاتل اور ڈکٹیٹر امریکہ اپنی جان خلاصی کے لیے دوحہ قطر میں عرب حکمرانوں کے دفاتر کے چکر کاٹنے پر مجبور ہو چکا ہے تو دوسری طرف پاکستانی مرتدین دارالعلوم حقانیہ اور منصورہ میں طالبان کی ہمدردیاں ڈھونڈنے میں مصروف ہو چکے ہیں۔

لیکن مجاہدین اسلام امیر المؤمنین حفظہ اللہ کی امارت وبیعت کے سائے تلے انشاء اللہ طاغوتی نظاموں کے خاتمے اور احیاء خلافت علی منہاج النبوۃ سے کم کسی چیز پر بھی ہر گز قانع نہیں ہوں گے۔

میں اس موقع پر شام اور برما میں جاری روافض اور بدھ مت کے پجاریوں کے مظالم پر وہاں کے مظلوم مسلمانوں کو صبر کی تلقین کرتا ہوں اور عالم اسلام کے غیور نوجوانوں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ ان مظلومین کی مدد کے لیے کمر بستہ ہو جائیں اور قرآنی فیصلے پرعمل کرتے ہوے مسلح قتال شروع کریں۔

اے امت کے معزز علماء کرام! امت مسلمہ پر کم از کم ان اندوہناک مظالم کے بعد تو جہاد کے فرض عین ہونے کا فتوی جاری فرمائیں ،ورنہ حشر میں ان مظلوموں کے ہاتھوں سے آپ کا گریبان ہر گز نہیں چھوٹے گا۔اے شام و برما کے مسلمانو! ہم پاکستان میں روافض اور بدھ مت کے پجاریوں اور ان کے محافظ پاکستانی مرتدین کو بھاری تعداد میں قتل کر کے تمھارا انتقام لیتے رہیں گے۔انشاء اللہ

محترم پاکستانی مسلمان بھائیو !تحریک طالبان پاکستان اس ملک میں سیکولر جمہوری نظام کے خاتمے اور نفاذشریعت کے عظیم مقصد کی خاطر جہاد کر رہی ہے، اسلام کے نام پر لاکھوں مسلمانوں کی قربانی سے حاصل ہونے والے اس ملک میں سڑسٹھ سالوں سے جمہوریت اور آمریت جیسے طاغوتی نظاموں کا ہی دور دورہ ہے جس نے اس ملک کے باشندوں کو بے دینی ،فحاشی وعریانی،شعائر اسلام کی توہین ومذاق ، قتل و غارتگری، لوٹ مار، جاگیرداری، وڈیرہ شاہی اور مکمل بے روزگاری کے سوا کچھ بھی نہیں دیا۔

اے پاکستان کے غیور مسلمانو! کبھی آپ نے اس دینی اور دنیاوی مکمل تباہی کے اصل سبب کو بھی جاننے کی کوشش کی ہے؟ اور کیا کبھی ہر دم پاکستان کا نعرہ لگاتے وقت آپ نے اس کے قیام کے اصل مقصد کی طرف بھی ذرا توجہ کی ہے؟ چلو نہیں کی یا آپ کے پاس اتنا وقت نہیں ہے تو کیا سڑسٹھ سالوں سے مسلسل جاری تجربے آپ کے دماغوں پر جمہوریت اور آمریت کے ہتھوڑے برساتے، زبان حال سے یوں گویا نہیں ہیں کہ ہم ہی وہ باطل ظالمانہ کفری نظام ہیں جو تمہاری مکمل تباہی کے ذمہ دار ہیں، ہم ہی نے سکندر مرزا،یحیی خان جیسے غدار،ذوالفقار بھٹو،ضیاء الحق اور پرویز مشرف جیسے تاریخی ڈکٹیٹر،بینظیر، نواز شریف اور یہاں تک کہ عالمی ڈاکو اور لٹیرے زرداری تک کو تم پر مسلط کیاہے۔

لیکن میری محبوب اور مظلوم قوم!آپ ہو کہ ان منحوس نظاموں سے جان چھڑا کر شریعت الہیہ کے پاکیزہ ترین نظام کو اپنانے کے بجائے انہی باطل نظاموں کے پیچھے دوڑ رہے ہو:

بیمار ہوئے تھے جس کے سبب
اسی عطار کے بیٹے سے دوا لیتے ہیں

آج عید کے اس مبارک موقع پر میں آپ کو سنجیدہ غور وفکر کی د عوت دیتا ہوں کہ اس ملک کی تباہی کا اصل ذمہ دار یہاں پر مسلط طاغوتی نظام اور شریعت الہیہ کامکمل فقدان ہی ہے۔

لہذا اے معزز علماء کرام! مخلص صحافی بھائیو!اور ہر طبقے سے تعلق رکھنے والے سچے مسلمان دانشورو!

اب اس قوم کو مزید تباہی کی طرف نہ بڑھنے دو! انہیں روکو۱ انہیں چیخ چیخ کر بتاؤ! کہ جمہوریت وآمریت تمہاری دنیا چھیننے کے بعد اب تمھارا ایمان برباد کرنے کے درپے ہے، اور ان کے ہاتھ پکڑ کر شریعت الہیہ کے قیام کے لیے جاری حقیقی کوشش میں شریک ہو جاؤ، ورنہ اللہ کے نزدیک اس قوم کی تباہی کے حقیقی ذمہ دار آپ ہی شمار ہونگے۔

مجاہدین اسلام کی پاکیزہ جدو جہد کو ملکی اور غیر ملکی میڈیا نے ہمیشہ نہایت منفی انداز میں پیش کیا ہے،

چند ایک مقامات پر بعض بے گناہ مسلمانوں کی شہادت کو بڑھا چڑھا کر پیش کرنا،جبکہ مجاہدین کو بدنام کر نے کی غرض سے پاکستانی مسلمانوں کی حقیقی قاتل مرتد ایجنسی آئی ایس آئی کی طرف سے عوامی مقامات اور بازاروں میں کیے گیے دھماکوں کو طالبان کے کھاتے میں ڈال کرمجاہدین کو پاکستانی عوام اور معاشرے کا قاتل ثابت کرنے کی شرمناک کوشش جاری ہے۔

میڈیا میں موجود کفار کے ایجنٹوں کو ہم تنبیہ کرتے ہیں کہ وہ باز آجائیں،جبکہ سنجیدہ اور مخلص طبقے کو دعوت فکر دیتے ہیں کہ وہ حقیقی منظر کو واضح کریں، اس کے ساتھ ہی ملک بھر میں موجود تحریک طالبان کے مجاہدین کو بطور خاص تلقین کرتا ہوں کہ وہ اپنی کاروائیوں کی منصوبہ بندی کے وقت مسلمان عوام کی جان ومال کے تحفظ کا بھرپور خیال رکھیں اور کسی ایسی جگہ پر ہدف کو ٹارگٹ کرنے سے احتراز کریں جہاں عوام کے نقصان کا زیادہ اندیشہ ہو اور ایسے لوگوں پر بھی کڑی نظر رکھیں جو تحریک طالبان کا نام استعمال کر کے بے گناہ مالدارمسلمانوں کے اموال لوٹنے کی کوشش کرتے ہیں،تصدیقی ثبوت ملنے پر انہیں عبرتناک سزا دینے میں ہرگز تاخیر نہ کریں۔

عزیزدوستو! اس بات سے تو آپ بخوبی آگاہ ہو کہ پاکستانی قوم اوراسلام کے مفادکی خاطرتحریک طالبان نے پاکستانی حکومت کو کئی دفعہ سنجیدہ مذاکرات اورجنگ بندی کی پیشکش کی لیکن عقل وشعور سے نابلد ان احمق حکمران اورصلیب و یہود کے آلہ کار فوجی جرنیلوں نے اس کو ہمیشہ طالبان کی کمزوری سے تعبیر کر کے اپنے بیرونی آقاؤں کے حکم پر ملک و قوم پر مسلسل جنگ مسلط کرنے کو ہی ترجیح دی۔جبکہ کئی مواقع پر معاہدوں اور مذاکرات کی آڑ میں یہود مدینہ کا کردار ادا کرتے ہوئے طالبان اور مسلما نوں کو دھوکہ دینے کی کوشش کی گئی اور معاہدوں میں طے شدہ اصولوں کی صریح خلاف ورزی کر کے ان کا الزام ہمیشہ طالبان پر ڈال کر سادہ لوح عوام کو طالبان سے ہی بد ظن کیا جاتا رہا۔

انکی آنکھیں ڈالر اور کرسی کی چمک سے خیرہ ہو چکی ہیںـ ملک و قوم اور اسلام کے مفاد سے ان کو کوئی سروکار نہیں ہے ،اب انکی حیثیت دھوکے باز،منافق اور یہود کے آلہ کار کے سوا کچھ بھی نہیں ہے، لہذا ان سے مذاکرات اور بات چیت چہ معنی دارد؟

تحریک طالبان نے اپنے عظیم اور محترم رہنما مولا نا ولی الرحمان کی شہادت کے بعداس سلسلہ کو معطل کر دیا ہے اور جنگ کے میدان میں ان سور ماؤں کو بھرپور طریقے سے آزمانے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

لیکن سنجیدہ قومی و ملکی قیادت ،علماء کرام اور دانشور طبقے میں سے کوئی بھی انکی ضمانت دیکر ٹھوس بنیادوں پر بغیر کسی دھوکہ دہی کے بات چیت کی پیشکش کرے تو تحریک طالبان اب بھی ایسی پیشکش پرغور کر سکتی ہے،

آخر میں اس مقدس راستے میں کفارو مرتدین کے ہاتھوں گرفتار اے اسیران اسلام!اور شہداء کرام کے لواحقین! میں آپ کو اللہ کی راہ میں پہنچنے والی تکلیف پر صبراور اللہ کے نزدیک بڑے اجر کی توقع رکھنے کی تلقین کرتا ہوں، ہم آپ کی تکلیف کو اپنی تکلیف جانتے ہیں اور آپ کو ہرگز بھولے نہیں ہیں،یہ تکلیفیں عارضی ہیں، شریعت کی عظیم نعمت کے مقابلے میں یہ کوئی حیثیت نہیں رکھتیں جبکہ اس مقدس راستے میں ان مشقتوں کے پانے پر آپ خوش قسمت اور مبارکباد کے مستحق بھی ہو!

اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔

والسلام

آپ کا بھائی حکیم اللہ مسعود

----------------------
مؤسسة عمر للإعلام
ادارہ عمر برائے نشرواشاعت

حركة طالبان باكستان
تحریکِ طالبان پاکستان






المصدر : (مركز صدى الجهاد للإعلام)
مآخذ : (صدى الجہاد میڈیا سینٹر)

الجبهة الإعلامية الإسلامية العالمية
عالمی اسلامی میڈیا محاذ

رَصدٌ لأخبَار المُجَاهدِين وَ تَحرِيضٌ للمُؤمِنين
مجاہدین کی خبروں کی مانیٹرنگ کرنا اورمؤمنین کو ترغیب دلانا